Sunday, 11 March 2012

Aaj ka Totka (آج کا ٹوٹکا)


(پتھرچٹ (پتھری کی تکلیف میں کارآمد)

پتھرچٹ عام طور پر مل جاتا ہے۔  سننے میں یہی آیا ہے کہ اس سے پتے کی پتھری رنگ بنا کر نکالتے ہیں۔ کسی بھی نرسری سے آپ اس کا گملہ لے سکتے ہیں۔  اس کے پتے رس سے بھرے ہوتے ہیں۔ تھوڑے سے موٹے ، انہیں ہاتھ سے موڑا جائے تو ٹوٹ جاتے ہیں۔  بارہ مہینے پتھرچٹ کا پودا ہرا بھرا نظر آتا ہے۔  میرے ایک عزیز کو پتھری کی وجہ سے درد لاحق ہوا تو میں نے انہیں ایک گملا پتھرچٹ کا دے دیا۔  انہیں کہا کہ صبح نماز پڑھ کر ایک یا دو چھوٹے پتے لے کر تین یا پانچ کالی مرچوں کے ساتھ چبا کر کھا لیں۔  ایک گھنٹہ بعد ناشتا کریں۔  دس پندرہ دن میں ان کو بہت فائدہ ہوا۔  پھر ان کو پتھری کی شکایت نہیں ہوئی۔  سورج نکلنے سے پہلے پتے چبائیں تو تلخی یا کھارے پن کا احساس نہیں ہوتا ،  بعد میں کھانے سے تلخی محسوس ہوتی ہے۔  پتھرچٹ کے پتے توڑ کر دھو کر بیسن لگا کر اگر پکوڑے تل لیں تو یہ  بڑے مزے کے بنتے ہیں۔  بچوں کو بھی ایک ایک پکوڑا دیں۔  اس کے پتوں کا رس آج بھی ہندوستان میں مختلف امراض کے علاج کے لیے دیا جاتا ہے۔  پتھری کے لیے لیموں کا رس اور زیتون کا تیل بھی مفید ہے۔  کسی اچھے حکیم کی زیرِنگرانی استعمال کرنے سے فائدہ ہوتا ہے۔  پتھری کی ابتدا میں پتھر چٹ مفید ہے۔  آپ الٹراسائونڈ کرائیے۔  پتھری بڑی ہے تو نکلوانی پڑے گی۔ آپ غذا میں بھی احتیاط کریں۔  گوشت زیادہ نہ کھائیے۔  سبزیاں اور پھل آپ کے لیے مفید ہیں۔  ٹماٹر بالکل نہ کھائیے۔  تھوڑی سی غذائی احتیاط سے آپ محفوظ رہ سکتے ہیں۔ پتھرچٹ دس پندرہ دن کھا کر دیکھئے، اس سے نقصان نہیں ہوگا۔پتھری کے علاج کے لیے بنی ہوئی دیسی ادویات حکیموں کے مطب سے مل جاتی ہیں۔ آپ ا لٹراسائونڈ کی رپورٹ دکھا کر لے سکتے ہیں۔

No comments:

Post a Comment

Blogger Gadgets